رات کی ڈاءری صبح کی تحریر.

مورخه 25 جولایی آدھا رمضان گذر چکا هے.هم یه واضح کرتے رهتے هیں که جو ھم ناسمجھ کی سمجھ میں آتا هے لکه دیا جاتا هے.اور یه قابل اعتراض هوسکتا هے لیکن ٹویٹر فیس بک کے گالی بردار رضاکار اعتراض کریں بحث کریں لیکن فحش زبان سے گریز کیا جایے.هماری تحریر هماری تربیت هے چاهے عکاسی والدین کی هو یا لیڈر شپ کی.

بات گرم هے صدارتی الیکشن کی تو عدلیه نے ن لیگ کی درخواست په صدارتی انتخاب ٣٠جولایی کو کرانے کا حکم بغیر دوسرے فریق کو سنے دے دیا.اس پورے معاملے په رضا ربانی کاوقف صحافتی حلقوں میں درست جانا گیا لیکن کھل کر کهیں بھی تنقید نه هویی.ایم کیو ایم کی جانب سے ممنون حسین کی حمایت بھتر اور مثبت قدم هے. اس طرح کراچی اور پنجاب قریب آییں گے سنا هے ممنون حسین متحده کے وفد سے شاید کل ملاقات بھی کریں گے . یه بھت خوش آءیند قدم هوگا.کراچی اور ن لیگ کی قیادت کے قریب آنے سے یه ارض پاک مضبوط اور خوشحال هوگا. خوشحال کراچی خوشحال پاکستان.Image

ثمینه خاور اپنی دوسری ڈگری کو بھی تصدیقی مھر نه لگواسکیں اور آج نا اھل قرار پاییں.پچھلی پیشی میں رفاهی یونیورسٹی کی ایک ڈگری جمع کرایی جو تصدیق نه هویی پھر مسز خاور نے پرسٹن یونیورسٹی کی ڈگری جمع کرایی جو که دو نمبر ثابت هویی.سوال یه هے که عاءله ملک اور مسز ثمینه خاور دو نمبر فوجری کی گیی ڈگریوں په پانچ پانچ سال اسمبلیز میں گذار چکی هیں.صرف تنخواھ اور مراعات کروڑوں کا بجٹ اور صوابدیدی فنڈز کون حساب لےگا.عدلیه اور الیکشن کمیشن واضح لایح عمل اختیار تاکه ان دو نمبری لوگوں سے حساب هو سکے ورنه اس طرح چھوڑ دینے کا مطلب تو ریسٹ دینا هے.ویسے صوبه سندھ سے ابھی تک کویی جعلی ڈگری ھولڈر آیا نھیں. یه سوغات پنجاب میں وافر پایی جارهی هے.

Image

ریاست خیبر پختون خواھ جھاں تحریک انصاف و جماعت اسلامی کی حکومت هے وهاں کے صوبایی وزیر مواصلات شوکت یوسف زءی ایک ٹی وی چینل په بشری گوھر کے ساتھ لایو پروگرام کر رهے تھے که جب جواب نه بن پڑا تو بولے بی بی تم سر په دوپٹه لو پرده کرو اور بدتمیزی کی.یه بشری گوھر کی بات نھیں بلکه یه تحریک انصاف کی کونسی پالیسیز هیں که آپ آیے تو جماعت اسلامی آپ کی بی ٹیم بنی چلو کویی بات نھیں لیکن آپ جلسوں میں سلیو لیس کنسرٹس کرانے والے لوگ هیں اور آپ کے ایم پی اے کبھی سلمان تاثیر کے قاتل کو چھوڑنے کی بات کرتے هیں،تو کبھی زبردستی حجاب کراتے هیں، آپ کے آنے سے کرک میں پاکستانی آیین منسوخ هوچکا هے اور کویی من گھڑک پیریلل PARALLEL نظام رایج هوچکا هے.جھاں عورت بغیر برقے کے نھیں نکلتی بغیر محرم نھیں نکلتی بازار اسکول کالج سے خواتین کا کویی تعلق نھیں . ایک عجیب نظام قایم هے اور ان کے آنے سے یه مختلف جگھوں په امپلمنٹ هونا شروع هوگیا هے.

Image

آج یه لکه دینے میں کوءی مضایقه نھیں که طالبان کے پی کے اور کراچی میں ان قوتوں کے لیے گراؤنڈ بناتے رهے.جن سے طے هوگیا تھا که مذاکرات کے نام په ھمارا وضح کیا گیا نظام رایج کرو گےهمارے ایک دوست عمادالدین تو کھتے هیں که ان کی مشاورت سے ٹکٹوں کی تقسیم هویی هے.ان کے پاس اس کے ثبوت بھی ھیں.ویسے کیا طرز سیاست هے که ایک طرف خیبر پختون خواھ میں ڈنڈا بردار شریعت اور ایک طرف کراچی دھرنوں میں سلیو ؤ لیس دھرنے جھاں شیشه پانی سب چلا.خدا بچایے نام نھاد اسلام پسند تنظیموں سے دنیا بھی رسواء آخرت بھی خراب.

بتاریخ 25جولایی 13 جے رضا زیدی. @junaid890

Advertisements

Author: Junaid Raza Zaidi

The Only Sologon is Pakistan First

3 thoughts on “رات کی ڈاءری صبح کی تحریر.”

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s