رات کی ڈاءری سویرے سویرے

20137584110_samaa_tv
24واں روزه 3اگست کا دن کراچی میں بارش کی نظر هوگیا.موسم تو خوشگوار تھا هی لیکن آج ابر رحمت کھل کر برسا اور کراچی میں موسلادھار گرج چمک کے ساتھ بارش هویی.

کراچی کسی دریا کے کنارے واقع نھیں لیکن یھاں کی ھرگلی دریا بنی هویی تھی هر ناله دریایے چناب کا سا منظر پیش کر ریا تھا لوگوں کی گاڑیاں روڈ په بند هو کے کھڑی تھیں یا ٹکرا کے بند هو گیی تھیں. نارتھ ناظم آباد ، لیاقت آباد ، گلشن اقبال حتی که نو منتخب صدر ممنون حسین کا ڈیفینس والا گھر بھی کسی دریا کے ٹوٹے هویے بند کا منظر پیش کر رها تھا.

لوکل باڈیز 79 کے قانون کو آسمانی صحیفے کا درجه دینے والے اپنے فون بند کرکے گدھے کے سینگ بن چکے تھے کهیں شھری حکومت نظر نھیں آرهی تھی صرف تعفن اور پکے نالوں سے ابلتا هوا پانی 79کے لوکل باڈی ایکٹ کی کامیابی تھی.

201361315233

ھم جب یونیورسٹی روڈ په نکلےتو هم کو متحده قومی موؤمنٹ کے کارکنان گٹر کھولتے هویے اور روڈ کلیر کراتے هویے ملے. ممتاز منزل و ایکسپو سینٹر په دونوں طرف امدادی کام جاری تھا.هم بھی اتر کر ان سے ملے معلوم کرنے په پتا چله که الطاف حسین نے ایم پی ایز ، ایم این ایز و متحده کی قیادت کو فوری امدادی کاموں میں لگ جانے کا حکم دیا هے. یه متحده کا طرز سیاست و خدمت رها هے که کارکنان کی اک فوج اک اشارے په نکل آتی هے.ھم ذرا آگے نکلے اور طارق روڈ سے هوتے هویے ڈیفنس جارهے تھے که مین روڈ په شارٹس پهنے فرنچ رکھے ایک بھاری سے بدن کا نوجوان امدادی کاموں میں مصروف نظر آیا.هم نے گاڑی ھلکی کرکے پوچھا که یه کیا هورها هے تو پته چلا یه متحده کے ایم این اے علی رضا عابدی ھیں.ھم نے ملاقات کی اور موبایل میں کچھ تصویریں اتاریں.اور اب ھمارا سفر اپنی منزل فیز 4 ڈیفنس تھا.جب ھم ڈیفنس لایبریری کراس کرکے شیل کے پمپ په پهنچے کو گاڑی نے چلنے سے انکار کردیا کیونکه هم گاڑی آگے لے کر جارهے تھے اور گذری نالے کا ابلتا امنڈتا پانی ھمیں سنسیٹ بولیورڈ دکهیل رها تھا.هم بڑی مشکل سے یھاں سے نکلے اور منزل په جانے کا اراده ترک کرتے هویے واپس هویے تو پنجاب چورنگی په پی اینڈ ٹی کالونی کے متاثرین بیٹھے تھے پته چله یه ملحقه کچھی آبادی هے جھاں پانی بھر چکا هے اور مکان تالاب بن چکے هیں اور سندھ حکومت کا کویی نماینده کویی مشینری حته که ایم این اے عارف علوی اینڈ کمپنی میں سے بھی کویی نھیں آیا.اک نوجوان جذباتی هونے لگا تو هم نے اسے سمجھایا که ان ایم این اے ایم پی ایز کے بڑے کام هوتے هیں. ٹویٹر ٹرولنگ ، فیس بک میسیجنگ ، بلیم گیمز یه کام هیں اور اس سے هٹ کر اسکیلنگ ، ٹیتھ واشنگ ، رووٹ کنال ،یه کیا جاسکتا هے لیکن جوان تیری دلجویی اور مدد یهاں 250میں تو ممکن نھیں
karachi-rain-governor-house
.

حیدر آباد کا حال بھی جو خبروں میں سامنے آیا که کروڑوں خرچ ک رکے جو نالے بنایے گیے وه بھی کویی سودند نھ رهے.کراچی کی زبان عام په مسنگ مصطفی کمال اور حیدرآباد کی زبان عام ھمیں مسنگ کنور نوید کهتے هویے ملی. سندھ کی بدقسمتی کے مظفر اویس ٹپی کو وزارت بلدیات ملی هے سرکار کو یه تک پته نه هوگا که کے٣ پروجکٹ کیا هے پانی کا بھاؤ کیسے کٹے گا مشینری کھاں سے آیے گی.با الفاظ دیگر  گاڑی چلانے والا جھاز کیسے چلایے گا.ساری عمر شیشے کے گھر میں بیٹھ کر بارش کا مزه لینے والوں کو کیا پته که غریب کی چھت کیسے ٹپکتی هے.ویسے قاعم علی شاھ کو ٹپی صاحب کے لیے ایک وزارت چاینا کٹنگ کی بھی رکھنی چاهیے.تاکه کام هوسکے یه بلدیات ولدیات ان کے بس کے روگ نھیں. پانچ سال وزارت بلدیات موجوده اسپیکر کی باندی بنی رهی لیکن کراچی حیدرآباد میں نکاسی کے نالوں کی صفایی تک نه کراسکی.

resize

چلتے چلتے اپنے کل کے پیج په پگارا صاحب غلط چھپ گیا تھا جس کی معذرت پی ایم ایل کے وفد کی قیادت امتیاز شیخ نے کی. آخر میں کل کراچی کی سڑکوں په ھم جھاں جھاں گیے ھمیں مصطفی کمال کا جمله یاد آتا رهاکه متحده کے قاعد کے پاس هزاروں مصطفی کمال.

 بتاریخ.٣اگست
@junaid890

Advertisements

Author: Junaid Raza Zaidi

The Only Sologon is Pakistan First

1 thought on “رات کی ڈاءری سویرے سویرے”

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s