رات کی ڈایری سویرے سویرے…

طویل غیر حاضری کے بعد پهر رات کی ڈایری سویرے سویرے کا سلسله تحریر آج سے پهر پیش خدمت هے.اس غیر حاضری کی وجه تھی کچھ کاروباری مصروفیات.همارے پچھلے 10یوم سندھ و پنجاب کے مختلف دیھاتوں میں گذرے یهاں په کیا کیا بیتی آپ سے share کرتے رهیں گے.

مختلف جگھوں په بڑی دل دھلادینے والی اور حماقتوں سے بھرپور خبریں ملتی تھیں. جب مھاجر لبریشن آرمی کی نیوز آیی تو هم نے انتظار کیا که شاید اب مھاجر لبریشن نیوی و ایرفورس کی باری بھی آیے گی لیکن ایسا نھیں هوا . هاں البته 19000 نیٹو کنٹینرز کی نیوز آگیی.حماقتوں اور لطافتوں سے بھرپور ان خبروں نے دھلا دیا که92میں بھی جناح پور جیسے احمقانه الزامات کے بعد ایک ناجایز آپریشن کراچی کی معصوم آبادی کا مقدر بنا تھا اب رب خیر کرے.یه سوچ کے هی دل دھلا جاتا تھا.

ان خبروں کے بعد هم سوچنے په مجبور هوگیے که یه کون سی سازش هے اور اس میں کون کون انوالو هے. سوچ کے ارتقایی عمل کے نتیجے میں جو بات سامنے آیی که آصف نواز ایک سوچ ، ایک کیفیت ، یا جبلت کا نام هے اور اس کیفیت میں بغض و عناد اپنے نقطه عروج په هوتے هیں. یه کیفیت عموما اضطراب سے باھر هوتی هے لیکن سلام هے کراچی والوں په اور ان کی قیادت په که انتھایی ذیرک انداز سے اس سازش کا مقابله کیا اور فتح مبین مقدر بنی.کراچی والوں نے همیشه ایسی سازشوں کا مقابله اپنی استقامت اور مدلل سیاست سے کیا چاهے کردار آصف نواز جنجوعه هوں، نصیر اختر هوں، نصیرالله بابر هوں یا آج حضرت موصوف رضوان اختر هوں.نیٹوکنٹینرز کے حوالے سے جو معلومات حاصل هوییں که یه کویی سوات کے بنے هویے تالے نھیں جو ٹوٹ جاییں یه کوڈڈ ڈیکوڈڈ  کاکز هوتے هیں جو که بذریعه کمپیوٹر امریکه سے انلاک هوتے هیں اور اوپر سے امریکی حکام کا بیان آیا که همارے تو کویی کنٹینرز چوری نھیں هویے اور فوجی سامان کی ترصیل بذریعه کراچی هوتی هی نھیں.یعنی پاکستانی ایجنسیز کو یه تک نھیں پته که جو کنٹینرز بذریعه کراچی افغانستان جاتے هیں ان میں هوتا کیا هے اور دعوی دلی کی جامع مسجد په پاکستانی جھنڈے کا یا نیویارک میں پاکستانی اذانوں کا .وه کیا کهتے هیں بڑی بڑی باتیں کرتے تھے.بڑی بڑی باتیں.

 images 277077_140813669331744_3605516_n

موجوده ڈی جی رینجرز سوات مالاکنڈ اور باجوڑ آپریشن نمٹا کے آیے هیں اور شھر کراچی کو شاید موصوف باجوڑ ایجنسی کی تحصیل تصور کرتے هیں جب سے انعام میں موصوف کو ڈی جی رینجرز کراچی تعینات کیا گیا هے رینجرز کی گولیاں کبھی کسی ٹیکسی ڈرایور کو چھلنی کرتی تو کبھی کسی موٹر ساییکل سوار کی جان لے لیتی هیں.کاش اس ملک میں کویی ان قانون نافذ کرنے والے اداروں کا بھی ٹرایل کرے که یه بغض کراچی و بغض اردو کیا ان کی گٹیوں میں چٹایا جاتا هے اور یه کس کو جوبده هیں اور یه کیسی جمھوریت هے که پارلیمان کی سپریمیسی چیلنچ کی جارهی هے.ایسی رپورٹس ان کے خواهشات کی عکاسی کرتی هیں.

099-480x238 2013530113417

چلتے چلتے سلام هو چیف جسٹس صاحب په که جو چیف چیف کرے اس کے لیے آپ کمیشنز بنادیں اور جو عدلیه کے دروازے کے باھر شرمناک ججا ججا کے نعرے لگایے اس سے کویی سوال نھیں بلکه اندھے قانون کا روایتی اصول.بدلو سوچ کو تو بدلے گا پاکستان…………

8ستمبر13 جے. رضا. زیدی

@junaid890

Advertisements

Author: Junaid Raza Zaidi

The Only Sologon is Pakistan First

1 thought on “رات کی ڈایری سویرے سویرے…”

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s