بات تو سمجھ سمجھ کی هے. __________________________

Image

آج کل کچھ پته نھیں که حالات کس ڈگر په هیں. کے پی کے لطایف هوں یا کراچی کی صورتحال کسی چیز کا ادراک ذرا مشکل سے هی هو رها هے.کبھی ٹایم
نھیں مل پارها تو کبھی انٹرنیٹ. لیکن دماغی کیڑے نے ڈنک مار مار کے لهو لهان کردیا هے تو عادت سے مجبور هوکے جو سمجھ آیا وه بکتے چلیں.

آج الطاف حسین کا بیان نیے صوبوں کے حوالے سامنے آیا اور بے شمار وڈیرے جاگیردارچاهے سندھ کے بیٹے هوں یا پنجاب کے جوان ان کے کچھ مضحکه خیز ری ایکشن سامنے آیے.کسی نے کھا سندھ تقسیم نھیں هونے دیں گے کسی نے کھا الطاف حسین لندن میں بیٹھ کر سیاست کر رهے هیں عجیب و غریب باتیں هیں جو جاری و ساری هیں.

Image

Image

الطاف حسین کے بیان کو سمجنے کی ضرورت هے. الطاف حسین نے بارها بالخصوص ماضی قریب میں سندھ کی لسانی بنیادوں په تقسیم کی صد فیصد مخالفت کی تھی.اور جھاں تک مجھے سمجھ آیا هے که اب بھی الطاف حسین سندھ کی نھیں بلکه انتظامی بنیادوں په ملک بھر میں صوبے بنانے کی بات کر رهے هیں. اور یه کویی اچھمبے کی بات نھیں بلکه عام انتخابات سے پهلے آخری سیشنز میں پنجاب حکومت نے صد فیصد اکثریتی رایے سے جنوبی پنجاب کے صوبے کی قرارداد منظور کی. جسے الیکشن مھم میں پی پی پی و مسلم لیگ ن نے اپنا کارنامه گردانا. ن لیگ کو تو اس قرارداد کے عیوض اچھی خاصی نشستیں ملیں.لیکن یه کیا الیکشن کے بعد الیکشن کے وعدے؟ نیے صوبوں کے حوالے میں اگر ھمیں یاد ھو تو بابا حیدر زمان کی قیادت میں تحریک کے پی کے میں بھی موجود هے 11معصوم بے گناھ لوگ کے پی کے میں صوبے کے نام پر حال هی میں پولیس بولٹس کا نشانه بنے هیں اور ھزاره صوبے کی تحریک کو ق لیگ اور ن لیگ کی مشترکه کوشش کے طور په بھی یاد رکھا جاتا هے.لیکن سوال یه هے که اگر یه مطالبے پی پی پی یا ن لیگ کریں تو ملکی مفاد میں ان مطالبوں کو گردانا جایے اور کویی متوسط طبقے کا لیڈر متوسط طبقے کی آواز بنے تو سیاسی مفتیان فتوے دینا شروع کردیتے هیں. همیں اپنے اس دهرے معیار سے جان چڑھانی پڑے گی.اس ارض پاک میں دانشوروں کی رایے کے مطابق صوبوں کا قیام ضروری هے تاکه ترقی کے سفر کو برق رفتار بنایا جاسکے.

جب 70000 پاکستانیوں کے قاتلوں کی معافی کے لیے اے پی سیAPC هوسکتی هے تو 18کروڑ کی آبادی کے جایز مطالبے کے لیے آل پارٹیز کانفرنس کیوں نھیں بلایی جاسکتی. الطاف حسین نے آل پارٹیز کانفرنس بلانے کی بات کی هے اور الطاف حسین کا بیان پورے ملک کے لیے هے. پورے بیان میں لفظ کراچی یا سندھ کا کهیں ذکر نھیں هے. بلکه اس بیان سے تو خیبر پختون خواھ کے بھاییوں کو اٹھ کھڑے هونا چاهیے اور پنجاب کی قیادت کو غیرت کے کیپسول کھانے چاهیں که آپ نے عوام سے جو وعدے کیے تھے انھیں پورا کریں. یه جھوٹ اور منافقت کی سیاست کا باب اب بند هونا چاهیے.

Image

چلتے چلتے آج 11ستمبر هے سانحه بلدیه ٹاؤن کی برسی هے. سانحه بلدیه ٹاؤن جھاں فیکٹری ملازمین جن میں خواتین ، بوڑھے اور جوان جھلس کے راکھ بن گیے تھے. آج اتنه عرصه گذر گیا لیکن ان ماؤں کے آنسو خشک نه هویے اور ھم بھول بیٹھے اپنے گذروں کو. الله تمام شھداء کے درجات کو بلند کرے. آمین.

بقلم :جے رضا زیدی

Advertisements

Author: Junaid Raza Zaidi

The Only Sologon is Pakistan First

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s