رات کی ڈایری سویرے سویرے

Image

بڑا دل چاهتا هے که جب لکهنے بیٹھیں تو کچھ ھلکها پهلکا بھی لکها جایے.انور مقصود و مشتاق یوسفی کو موضوع گفتگو بنایا جایے.اسد شفیق کی سنچری اور گورے کی بال ٹمپرنگ په بات هونی چاهیے لیکن خدا غرق کرے ارباب اختیار کو  جو مسکرانے کے بھانے تک چھینے جاتے هیں.جس شھر میں شھری سارا دن لاشوں کی گنتی گنتے رهتے هوں جهاں پرخوف فضا هو وردی و ساده لباس دونوں صورتوں میں احساس عدم تحفظ جنم لے اس شھر میں کیا مسکراییں گے اور کیا جی پاییں گے.

جب سے عدلیه نے لیاری کو چھیڑا هے اور ڈی جی کو بلا کر باز پرس کرنے کی سعی کی هے جب سے کراچی کا علاقه لیاری میدان جنگ بن چکا هے.ڈی جی رینجرز سے جب پوچھا جاتا هے که لیاری کی صورتحال کیا هے تو وه فرماتے هیں که لیاری ایک پرامن ترین علاقه هے اور عدلیه کو جھوٹے لولی پاپس سے بھلایا جاتا هے اور شاباش هے عدلیه کو جو اتنی آسانی سے یه لولی پاپس چوس لیتی هے.

1382872332203

عدلیه جب سے نام نھاد آزاد هویی هے وه کون سا کام هے جو مکمل کیا هو جس ایشو کو عدلیه نے اٹھایا اس ایشو کو ادھورا هی چھوڑا بلکه بیچ میں نیچ نظریه ضرورت کے تحت  کمپرومایس کیا یا عمومی بازاری زبان میں بک گیے سالے.(یهاں وضاحت کرتے چلیں که عدلیه سے هماری مراد RO’s نھیں بلکه ھایی کورٹس اور سپریم کورٹ هے)
راجه رینٹل هوں یا سویس کیس هو ، این آر او هو یا ججز ایمپلایمنٹ کیس هر دفعه نتیجه منفی هی نکلا.کراچی بدامنی کیس کے بھانے سیاست دانوں کو منفی سیاست کا موقع دیا گیا تصویریں کھینچ گییں اداروں ، سیاست دانوں اور عوام کو لڑوایا گیا اور اسلام آباد بیٹھ کے مسکرایا گیا.

Image

پرامن کراچی یهاں کے مکینوں کا خواب بن کے رهگیا هے. جو غیر قانونی آبادیاں قانون نافذ کرنے والے اداروں کو تلاشی کی اجازت تک نه دیں تو ان سے کویی زور زبردستی نھیں هوتی جبکه اس کے برخلاف جو معززین اپنے گھروں کے دروازے کھول دیتے هیں جن علاقوں میں معاشرے کی معاشرت نظر آتی هے وهاں عجیب و غریب درندگی کی مثالیں قایم کی جارهی هیں.واضح مثالیں موجود هیں که اورنگی ٹاؤن ، لانڈھی ، شاھ فیصل ، برنس روڈ کے علاقوں میں کس طرز کا آپریشن جاری هے اور منگھو پیر ، کنواری کالونی ، افغان کیمپ ، کوچی کیمپ الآصف میں کتنا با ادب آپریشن جاری هے.کیا اصول اپنایا گیا هے که جو باپ بنے اسے بلاوجه باپ مان لو اور جو عزت دے سر متھے تے بٹھایے اسے چیر ڈالو.اسکے دلشاد کو بھی ماردو اسکے اکرام کو بھی ماردو اسکے ندیم کو اٹھالو اور اسکے جنید کو بھی پهنک دو.

Image

دوسری طرف جھاں دو گروپوں میں راکٹ فایر هوں وهاں داخل هونے سے پهلے اعلان کیا جاتا هے هم آرهے هیں هم نکل رهے هیں هم نکل گیے هیں هم پهنچ گیے هیں.نتیجا کویی هاتھ نھیں آتا کویی گواه نھیں بنتا اور کٹھرے میں کھڑے هوکے ایسے علاقوں کو پرامن علاقه گردانا جاتا هے.

“دستور یهاں بھی گونگے هیں
فرمان یهاں بھی اندھے هیں
اے دوست خدا کا نام نه لے
ایمان یهاں بھی اندھے هیں”

ارباب اختیار و نوکر شاھی کو ھارون رشید سے سبق حاصل کرنا چاهیے اور جھوٹی گواهی کو شرک کے بعد سب سے بڑا گناھ گرداننا چاهیے.یه سچ هے که کفر کے ساتھ معاشره چل سکتا هے لیکن ظلم کے ساتھ نھیں.

جے.رضا.زیدی
28.اکتوبر2013

Advertisements

Author: Junaid Raza Zaidi

The Only Sologon is Pakistan First

1 thought on “رات کی ڈایری سویرے سویرے”

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s