ذکر کچھ اھل چمن کا.

 277077_140813669331744_3605516_n

جب کچھ اچھے کی توقع هوچلی تھی دن اطمینان سے گذرا تھا هم قانون نافذ کرنے والے اداروں و دیگر سماجی و سیاسی تنظمیوں کی قیام امن کے حوالے سے لکهنا شروع کررهے تھے که اچانک انچولی دھماکے کی اطلاع ملی.پتا چلا که اپنی ماں کے پانچ پیارے شھید اور ستره سے زاید زخمی بتایے گیے.ساری امید ساری آس هی مرگیی جو که دن پر امن گذرنے کے بعد طلوع هویی تھی.

944762_427022217426596_1183637870_n

پهلا دھماکا چایے کے هوٹل په اور دوسرا ایک پکوان ھاؤس په هوا. دیکهنے والوں نے ایک قیامت صغری کا منظر دیکها هے که کسی کا ھاتھ نھیں تو کسی کا سر.بجلی فیل هوچکی تھی گھپ اندھیرا.دیکهنے والے بتاتے هیں که پولیس جایے وقوع سے دور عالم خوف میں کھڑی تھی ایک عجیب عالم تھا.کویی پرسان حال نه تھا.

پاکستان کے شھر کراچی په حق دعوی دایر کرنے والے نوسرباز کراچی کی میتوں په چپ رهے هم انتظار کرتے رهے که حضور خان صاحب کا منور حسن کا کسی احمد لدھیانوی کا کسی دوسرے صوبے سے کسی اور گورنر یا وزیر اعلی کا کویی فوری مذمتی بیان کچھ شاید آجایے لیکن افسوس که جو کل تک نعرے مارتے تھے که کراچی سب کا هے وه تو کسی تصویر کے کسی فریم میں نظر هی نھیں آیے.ان کی طرف سے تو کسی غم کی عکاسی تک نه هویی.رو گا کر پهر MQM اور اس کے کارکنان هی هر قسم کے حالات میں اھل کراچی کیلیے مسیحا کا سا کردار اداکرتے هیں اور انھوں نے آج پهر کیا.KKF کے رضاکار ایمبولینسز دوڑاتے لوگوں کو خون کے عطیات کیلیے جمع کرکے عباسی شھید لیجاتے هویے نظر آیے. دیگر سیاسی جماعتیں نه جانے کیوں اھل کراچی بالخصوص اردو بولنے والوں کیلیے سوتیلی ماں کا سا کردار ادا کرتے هیں.12گھنٹے گذر جانے کے باوجود اور کویی سیاسی و سماجی ورکر تاحال جایے وقوعه په نھیں پهنچا تھا.

1385202068148

کچھ بات خیبر پختونخواه میں سجے سٹیج ڈرامے کی بھی هوجایے جب عمران خان نے اسمبلی میں پهلی تقریر کی تھی تو مبصرین نے فرینڈلی اپوزیشن کا نام دیا تھا کچھ یاروں نے تو یهاں تک لکها تھا که جو رول میاں صاحب نے زرداری صاحب کیلیے پلے کیا تھا وهی رول اب عمران پلے کرنے جارهے هیں. اس وقت تو یه بات صرف قیاس آرایی لگتی تھی لیکن اب اس په ایمان آتا جارها هے.

پاکستان کی سیاست میں اینٹی امریکی عنصر یعنی امریکه سے نفرت کا بھی ایک کردار هوتا هے.هر دور حکمرانی میں ایسے elements پیدا کیے جاتے هیں که جن کو دکها کر امریکی ایڈ لی جاتی هے ان پریشر گروپس کا مقصد در پرده حکومتی سپورٹ هوتی هے.اور بالکل اسی طرز کی سیاسی بازیگری امریکه کے ساتھ اس وقت میاں صاحب و خان صاحب مل کے کهیل رهے هیں.

ڈرون ، نیٹو سپلایی و دیگر خارجی معاملات پالیسیز کے تحت چلتے هیں اور دنیا میں کسی بھی ملک کی خارجه پالیسی اس کی ملیٹری قیادت و پارلیمنٹیرینز بناتے هیں.یه بات تو واضح هے که پاکستان تحریک انصاف پهلے دھرنے کا اور اب شاید جلسے سے امریکه په پریشر بلڈbuild کر رهی هے تاکه domoreکی بازگشت سے دور هوا جاسکے.یه بات تو سب جانتے هیں که هنگو اٹیک میں مرنے والے پاکستان کے وفادار اور پاکستان کے حامی نھیں تھے بلکه وه دھشت گرد تھے.ایسے میں اس طرح کا پریشر گیم پلان که جلسے میں نه خیبر پختون خواه حکومت شریک هوگی نه عمران خان یعنی تاثر یه بن رها هے که کویی حکومتی جماعت یا لیڈر اس جلسے کو conduct نھیں کرا رهے بلکه یه عوامی ٹوله هے.!!!!! سوال یه پیدا هوتا هے که کسے دکھا یا جا رها هے؟؟؟یه کس سے کس قسم کی پرده داری هے.الطاف بھایی نے سچ هی تو کها که قوم سے حقایق چھپایے جارهے هیں

بقلم جے رضا زیدی. Twitter handle @junaid890

Advertisements

Author: Junaid Raza Zaidi

The Only Sologon is Pakistan First

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s