حالیہ متنازعہ تقریر یا نویں کی بائیلوجی

image

دیکھو دیکھو.. الطاف حُسین کی حالیہ تقریر پر تنقید بھی کون لوگ کر رہے ہیں, وہ جنکو اُن کی بیگم نے خود انگلش اسٹائل سیکھائے ہیں, کہتے ہیں شریف لوگ فیملی کے ساتھ بیٹھ کر یہ تقریر نہیں سن سکتے, بڑے آئے غیرت مند جب پھوپھو کی شادی میں انکی دختر نیک اختر شیلا کی جوانی اور منی بدنام ہوئی ڈارلنگ تیرے لیے پر زور دار ڈانس کر رہی تھی تب کسی نے پوچھا, کون کی چھوری ہے یہ بڑا زور دار ڈانس کررہی ہے تو اُس وقت خوشی سے نوٹوں کی گڈی لوٹاتے ہوئے, پلٹ کر بڑے فکر سے بولے ارے میری ہے, تایا میری, قائد, رہبر, رہنما, زندگی کے اصول بتاتا ہے, ایک ایک بات, نہیں یقین تو اپنا ماضی دیکھو پورن دیکھ کر تو تم لوگ بیگم کو پیار کرنے کے قابل ہوپاتے ہو. ہاں یہ تو سہاگ رات میں ہی نئی نویلی دلہن کو فلم دیکھا کر کہتے ہیں, دیکھو ایسے, دیکھو یہ والا.. اوپر سے جواب ملتا ہے اُفففف آپ کتنے اولڈ فیشن ہیں توبہ.. اور شرافت ایسی کہ. یہ تقریر فیملی کے ساتھ نہیں سن سکتے.. ابے اگر الطاف حسین نے یہ تقریر پہلے کی ہوتی تو آج تمیں فلموں کا سہارا نہ لینا پڑتا اپنی آفزائش نسل کے لیے کیونکہ کتابیں تو تم اب پڑتے نہیں, جہاں زندگی گزارنے کا ایک ایک اصول لیکھا ہے, ایک مومن کیسے کامیاب زندگی گزارے, جس خاص پانی کا الطاف حسین نے زکر کیا تھا پر نہیں لیا وہ پانی کا نام آپ بھی جانتے ہو, اگر نہیں جانتے تو کتابیں پڑھو وہاں سب لیکھا ہے. غسل کیسے اور کس کس طرح واجب ہوتا ہے اور غسل حاصل کرنے کا طریقہ کیا ہے. میاں بیوی میں کتنا پردا جائز ہے, ہم بستری کا نہ صرف جائز طریقہ لیکھا ہیں بلکے فضائل بھی بیان کیے ہیں, بڑوں سے دور ہو بڑوں کی تعلیمات سے بھی دور ہو, انگریز کا کھاتے ہو, ہر کام انگریزی میں کرتے ہو پر غسل کرنا نہیں آتا جس کے بغیر نماز تو کیا مسجد کے قریب نہیں جاسکتے. اور لگے دوسرے کی اُس بات پر تنقید کرنے جو تم سے کی ہی نہیں, جو تمارے لیے سننا ضروری بھی نہیں تھی. جو اگر تماری فیملی نے سنی بھی نہیں تھی پر تماری پبلسٹی کی وجہ سے اُن لوگوں نے بھی ابھی تک سن بھی لی ہوگی.. چلو اچھا ہے, اب وہ بھی جانتے ہونگے حمل کیسے ٹھرتا ہے. اور آئندہ کیسے احتیاط کرنی ہے.. تاکہ پھر کوئی تمارے جیسا پیدا نہ ہوسکے.

تحریر قادر غوری
بشکریہ ابوعلیحہ